اسلامی ملک کویت کا فوجی طیارہ ایمرجنسی ریلیف لےکر دہلی پہنچ گیا، حکومت ہند نے امیرکویت کا شکریہ ادا کیا

سفیر الناجم جو فوجی طیارے کے استقبال کے لیے نئی دہلی اندرا گاندھی انٹرنیشنل ہوائی اڈے پر موجود تھے، نے کہا کہ طیارہ میں کویت ریڈ کریسنٹ کی جانب سے 40 ٹن ہنگامی امداد تھی۔

وطن سماچار ڈیسک

اسلامی ملک کویت کا فوجی طیارہ ایمرجنسی ریلیف لےکر دہلی پہنچ گیا، حکومت ہند نے امیرکویت کا شکریہ ادا کیا

نئی دہلی: 6مئی (شمس الہدیٰ قاسمی) مشہور اسلامی ملک کویت  کی جانب سےایمرجنسی طبی امداد لانے والا پہلا کویتی فوجی طیارہ منگل کے روز دہلی پہنچ گیا۔ کویت نیوز ایجنسی کے لیے جاری ایک بیان میں سفیر جاسم الناجم نے کہا کہ یہ ہنگامی امداد کویتی قیادت بالخصوص عالی جناب امیر شیخ نواف الاحمد الجابر الصباح کی ہدایات کے مطابق بھیجی جا رہی ہے تاکہ دوست ہندوستانی عوام کی صحت سے متعلق پریشانیوں کو کم کرنے میں مدد ملے۔ 

سفیر الناجم جو فوجی طیارے کے استقبال کے لیے نئی دہلی اندرا گاندھی انٹرنیشنل ہوائی اڈے پر موجود تھے، نے کہا کہ طیارہ میں کویت ریڈ کریسنٹ کی جانب سے 40 ٹن ہنگامی امداد تھی۔ 

 

سفیر محترم نے بتایا کہ ہلال احمر کویت کی جانب سے اس پہلی امدادی کھیپ میں وینٹیلیٹرز، بڑی تعداد میں  آکسیجن کنسنٹریٹرز، مختلف سائز کے تقریبا تین سو آکسیجن سلینڈرز، چراثیم سے پاک کوریڈورس، چراثیم کش آلات، پرسنل حفاظتی ساز و سامان اور دیگر طبی اشیاء ضرورت شامل تھیں۔ کویتی سفیر نے تاکید کے ساتھ یہ بات کہی کہ یہ امداد کویتی قیادت، حکومت اور کویتی عوام کی جانب سے اس مشکل گھڑی میں ہندوستان کے ساتھ اظہار یک جہتی، اتحاد اور باہمی تعاون کے اظہار کے لیے ہے۔ انہوں نے فوری رد عمل اور جلد از جلد امداد کی فراہمی کے لیے وازرت خارجہ، وزارت دفاع اور کویت ہلال احمر سوسائٹی کے کلیدی کردار کی پذیرائی اور تعریف کی۔ 

ہندوستانی وزارت خارجہ کے جوائنٹ سیکریٹری، سفیر وپول نے کویت کی جانب سے امداد اور مختلف آفتوں کے دوران اس کی جانب سے اظہار یک جہتی و اتحاد کی تعریف کی۔ انھوں نے مزید کہا کہ کویت سب سے پہلے امداد کا ہاتھ بڑھانے والے ملکوں میں سے ایک ہے۔ انہوں نے اس مشکل گھڑی میں تعاون کرنے پر امیر، حکومت اور کویتی عوام کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں کویتی ذمہ داروں سے سریع رابطے کے لیے دہلی میں موجود کویتی سفارت خانے کی بھی تعریف کی اور کویتی ریڈ کریسنٹ سوسائٹی کی بھی پذیرائی کی۔ 

ہندوستانی اہل کار نے اس بات پر بھی زور دیا کہ اس وبا نے مشترکہ بین الاقوامی تعاون کی اہمیت کو ثابت کیا ہے کہ کس طرح عالمی سماج سنگین چیلنچز پر ایک ساتھ کام کر سکتا ہے۔ 

اس سے پہلے کویتی کابینہ نے کورونا وائرس کی تبدیل شدہ شکل سے مقابلہ کرنے کے لیے ہندوستان کو ہنگامی امداد بھیجنے کا  ایک اجلاس میں فیصلہ لیا تھا-

(بشکریہ: مولاناحذیفہ غلام وستانوی)

 

یہ خبر شاہنواز بدر قاسمی نے واٹس ایپ کے ذریعہ ارسال کی ہے اور اس خبر کو انہیں کے شکریہ کیساتھ من وعن شائع کیا جارہا ہے

You May Also Like

Notify me when new comments are added.