Hindi Urdu

مذہب

فکر وخیالات

مدیر کی قلم سے

Poll

Should the visiting hours be shifted from the existing 10:00 am - 11:00 am to 3:00 pm - 4:00 pm on all working days?

SUBSCRIBE LATEST NEWS VIA EMAIL

Enter your email address to subscribe and receive notifications of latest News by email.

اب گوڈسے کو لے کر امت شاہ نے دیا بڑا بیان

بی جے پی صدر امت شاہ نے یہاں ایک بیان میں کہا کہ تینوں رہنماؤں کی طرف سے کئے گئے تبصرے ان کی ذاتی رائے ہے اور پارٹی کا اس سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ پارٹی کی تادیبی کمیٹی نے 10 دن کے اندر اندر لیڈروں سے وضاحت طلب کی ہے۔ شاہ نے کہا کہ گزشتہ دو دن میں اننت کمار ہیج، سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر اور نلین کٹیل کے جو بیان آئے ہیں، وہ ان کے ذاتی بیان ہیں، ان بیانات سے بھارتیہ جنتا پارٹی کا کوئی تعلق نہیں ہے۔بی جے پی کے وقار اور نظریے کے برعکس ان تینوں بیانات کو انتظامی کمیٹی کو بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔

وطن سماچار ڈیسک

نئی دہلی، 17 مئی: بھارتیہ جنتا پارٹی کے قومی صدر امت شاہ نے گوڈسے کو لے کر بڑا بیان دیا ہے۔ امت شاہ نے جمعہ کو سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر، اننت کمار ہیج اورنلین کٹیل کے ’گوڈسے نواز‘ بیانات پر سخت ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے اسے پارٹی کے نظریات کے برعکس قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی مذکورہ رہنماؤں کی ان تبصرے کی حمایت نہیں کرتی ہے۔

بی جے پی صدر امت شاہ نے یہاں ایک بیان میں کہا کہ تینوں رہنماؤں کی طرف سے کئے گئے تبصرے ان کی ذاتی رائے ہے اور پارٹی کا اس سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ پارٹی کی تادیبی کمیٹی نے 10 دن کے اندر اندر لیڈروں سے وضاحت طلب کی ہے۔   شاہ نے کہا کہ گزشتہ دو دن میں اننت کمار ہیج، سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر اور نلین کٹیل کے جو بیان آئے ہیں، وہ ان کے ذاتی بیان ہیں، ان بیانات سے بھارتیہ جنتا پارٹی کا کوئی تعلق نہیں ہے۔بی جے پی کے وقار اور نظریے کے برعکس ان تینوں بیانات کو انتظامی کمیٹی کو بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ان لوگوں نے اپنے بیان واپس لے لئے ہیں اور معافی بھی مانگی ہے۔ پھر بھی عوامی زندگی اور بی جے پی کے وقار اور نظریات کے برعکس ان بیانات کو پارٹی نے سنجیدگی سے لے کر تینوں بیانات کو انتظامی کمیٹی کو بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انتظامی کمیٹی تینوں لیڈروں سے جواب مانگ کر اس کی ایک رپورٹ 10 دن کے اندر پارٹی کو دے گی۔

قابل ذکر ہے کہ بی جے پی کی بھوپال سے لوک سبھا امیدوار سادھوی پرگیہ سنگھ ٹھاکر نے جمعرات کو مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کو "محب وطن" بتایا تھا. اس پر اپوزیشن نے ناراضگی ظاہر کی تھی۔ تاہم بعد پرگیہ نے اپنے بیان کو واپس لیتے ہوئے اسی رات معافی مانگی اور کہا کہ وہ مہاتما گاندھی کا احترام کرتی ہیں۔ کیونکہ ملک کے لئے ان کے کام کو بھلایا نہیں جا سکتا۔

اننت کمار ہیج نے بھی پرگیہ سنگھ ٹھاکر کی تبصرہ کی حمایت کی تھی، لیکن بعد میں انہوں نے دعوی کیا کہ ان کا ٹوئٹر اکاؤنٹ ہیک کر لیا گیا تھا۔ کرناٹک کے بی جے پی رہنما نلین کٹیل نے گوڈسے کا مقابلہ سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی سے کرتے ہوئے کہا تھا کہ گوڈسے نے ایک قتل کیا، جبکہ قصاب نے 72 کو مار دیا اور راجیو گاندھی نے 17 ہزار کو مار ڈالا۔آپ فیصلہ کریں کہ اس میں کون زیادہ ظالم ہے۔ اگرچہ بعد میں انہوں نے بھی اس ٹویٹ کو ہٹا دیا تھا۔

You May Also Like

Notify me when new comments are added.