مذہب

فکر وخیالات

مدیر کی قلم سے

Poll

Should the visiting hours be shifted from the existing 10:00 am - 11:00 am to 3:00 pm - 4:00 pm on all working days?

SUBSCRIBE LATEST NEWS VIA EMAIL

Enter your email address to subscribe and receive notifications of latest News by email.

دہلی اقلیتی کمیشن کی سر گرمیاں

Administrators

کمیشن نے وقف پراپرٹی سے ناجائز قبضہ ہٹوایا

نئی دہلی: مہرولی کے کچھ باشندوں نے دہلی اقلیتی بورڈ میں شکایت کی کہ دہلی وقت بورڈ کی ملکیت مسجد اور قبرستان واقع خسرہ نمبر ۳/ ۱۱۱۵ (۱۶۶۵) پر دین محمد اور زبیر احمد نامی دولوگ قابض ہیں۔ یہ پراپرٹی سون برج مہرولی گاؤں میں واقع ہے اور دہلی وقف بورڈ اور ایس ڈی ایم مہرولی کے آرڈر کے باوجود خالی نہیں کی جا رہی ہے۔ کمیشن نے ایس ڈی ایم مہرولی کو ہدایت کی کہ فوری طور پر مذکورہ پراپرٹی سے غیرقانونی قبضہ ختم کرا کر تعمیل کی رپورٹ کمیشن میں داخل کی جائے۔ ایس ڈی ایم نے اطلاع دی ہے کہ فوری طور پر اس ہدایت پر عمل کرتے ہوئے مذکورہ پراپرٹی خالی کروا کراس کا قبضہ دہلی وقف بورڈ کودے دیاگیا ہے۔

دہلی کے اسکولوں میں اردو کی تعلیم

نئی دہلی: دہلی اقلیتی کمیشن میں حال میں متعدد شکایتیں آئیں کہ مختلف اسکولوں کے پرنسپل اردو پڑھنے والے طلبہ سے کہہ رہے ہیں کہ سنسکرت پڑھو اور اگر اردو ہی پڑھناہے توکسی اور اسکول میں جاؤ۔ کمیشن نے اس سلسلہ میں حکومت دہلی اوردہلی کارپوریشن محکمۂ تعلیمات کوکئی نوٹس جاری کئے ہیں، جو مندرجہ ذیل اسکولوں کے بارے میں ہیں: راجیو نگر مشرقی شاہدرہ میں واقع اسکول، تخمیرپور میں واقع گورنمنٹ بوائز سینئرسکنڈری اسکول، دیال پور میں واقع گورنمنٹ گرلز سینئرسکنڈری اسکول، یمناوہار میں واقع گورنمنٹ بوائز سینئر سکنڈری اسکول اور شمالی مشرقی ضلع میں واقع متعدد اسکول۔ اس کے علاوہ علیم عباسی نے شکایت کی کہ سرائے کالے خان کے گورنمنٹ بوائز سکنڈری اسکول میں اردو ٹیچر نہیں ہے۔ کمیشن کے نوٹس پر محکمۂ تعلیم نے اطلاع دی ہے کہ مذکورہ اسکول میں ایک گیسٹ ٹیچر بھیج دیا گیاہے۔

ڈی پی ایس متھرا روڈ کے پاس واقع زمین کے بارے میں نوٹس

نئی دہلی: ڈی پی ایس متھرا روڈ پرمدینہ مسجد کے پاس واقع قطعۂ اراضی خسرہ نمبر 484 پرچاردیواری کھڑی کرنے کے سلسلے میں صدر دہلی اقلیتی کمیشن ڈاکٹر ظفرالاسلام نے خود مذکورہ جگہ کا معاینہ کیا اور سنٹرل پبلک ورکس ڈپارٹمنٹ اور دہلی وقف بورڈ کونوٹس دے کر پوچھا ہے کہ مذکورہ جگہ پرکیوں چہاردیواری بنائی جا رہی ہے، کیامذکورہ زمین کو سندر نرسری کو حوالے کی جانے والی ہے، کیایہ صحیح ہے کہ مذکورہ زمین دہلی وقف بورڈ کی ہے اوربورڈ دہلی ہائی کورٹ میں اس زمین کامقدمہ لڑنے میں ناکام رہاہے، نیز یہ کہ مذکورہ زمین سے متصل قطعۂ اراضی پر جھگیاں قائم ہیں، وقف بورڈ اس کے بارے میں کیا کرنے والا ہے؟

مدرسہ پر قاتلانہ حملے کے بارے میں پولیس کو نوٹس

نئی دہلی: مشرقی دہلی کے مدرسہ باب العلوم کے ہاسٹل پر ۱۲/ستمبر کی رات کو ۲ بجے حملے کے بارے میں دہلی اقلیتی کمیشن نے ڈی سی پی سیلم پور کو نوٹس دے کر پورے معاملے کی تحقیقات کر کے رپورٹ داخل کرنے کو کہا ہے۔ حملے کے وقت بچے سو رہے تھے۔

,نئی دہلی: دہلی اقلیتی کمیشن نے اخباری اطلاعات پر از خود نوٹس لیتے ہوئے شمالی دہلی میونسپل کارپوریشن کے محکمۂ تعلیمات کونوٹس دے کرپوچھا ہے کہ کارپوریشن کے اسکولوں میں صبح اسمبلی میں گائتری منتر پڑھنے کے لئے کیوں سرکیولر جاری کیاگیاہے، کیا یہ ہمارے سیکولر نظام حکومت کی خلاف ورزی نہیں ہے، اور کیا اس کی وجہ سے طلبہ اور ٹیچروں کے درمیان اختلاف و افتراق نہیں پیدا ہو گا، کیوں کہ اقلیتوں سے تعلق رکھنے والے بچے مذہبی وجوہ کی بنیاد پر اس منتر کو نہیں گائیں گے۔

سولہ سالہ عبدالرزاق کی ماب لنچنگ کے بارے میں نوٹس

نئی دہلی: دہلی اقلیتی کمیشن نے دہلی میں پچھلے ۴ ستمبر کو سولہ سالہ طالبعلم عبدالرزاق کی ماب لنچنگ کے بارے میں ڈی سی پی شمالی مغربی ضلع کونوٹس دے کرمعاملے کی تحقیقات کرنے اور پورے حادثے کے بارے میں رپورٹ داخل کرنے کو کہا ہے جسمیں بتایا جائے کہ اس میں کون لوگ شریک تھے ،کیا ان کی گرفتاری عمل میں آ سکی ہے اور اگروہ گرفتار ہوئے ہیں تو ان کے اوپر کیا الزامات عائد کئے گئے ہیں اور کیا ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے۔

پارسی کمیٹی کی تشکیل

نئی دہلی: دہلی اقلیتی کمیشن میں بھارت سرکار کی طرف سے تسلیم شدہ اقلیتوں کی مشاورتی کمیٹیاں بنی ہوئی ہیں، جن میں مسلم، سکھ، عیسائی، جین اور بدھ کمیٹیاں کام کررہی ہیں اور کمیشن کے سامنے اپنے اپنے سماج کے مسائل رکھتی ہیں اور اس کے ممبران بطور خود بھی اپنے سماج کے لئے کام کرتے ہیں۔ اب تک اقلیتی کمیشن کی تاریخ میں پارسی سماج کی کمیٹی کسی وجہ سے نہیں بن سکی تھی۔ موجودہ صدر دہلی اقلیتی کمیشن ڈاکٹر ظفرالاسلام خان نے دہلی میں موجود پارسی انجمن کے عہدیداران سے مستقل رابطہ رکھا اور اب پارسی انجمن کی مدد سے پارسی مشاورتی کمیٹی کی تشکیل بھی کمیشن کی تاریخ میں پہلی بار ہوئی ہے جسمیں آٹھ ممبران ہیں۔

شہری سے بدتمیزی کرنے پر پولیس افسر کی فہمائش کا آرڈر

نئی دہلی: شاہدرہ، دہلی کے ایک شہری شری عالم نے دہلی اقلیتی کمیشن میں شکایت درج کرائی کہ دہلی پولیس کے انسپکٹر کیشو کمار نے مذکورہ شہری کے ساتھ بدتمیزی کی۔ کمیشن کے بار بار بلانے پر مذکورہ افسر نے نہ جواب دیا اور نہ ہی کیس کی سماعت پر حاضر ہوا، جسکی وجہ سے کمیشن نے سخت موقف اختیار کرتے ہوئے پولیس کے اعلی افسران کو اس افسر کے خلاف کارروائی کرنے کی ہدایت دی۔ مذکورہ افسر کو وجہ بتاؤ نوٹس جاری کیا گیا اور اس کے جواب کوقابل تشفی نہ پا کر اس کے خلاف کارروائی کی گئی ہے اورفہمائش کا آرڈ جاری کیا گیاہے، جس کے خلاف وہ ایک ماہ کے اندر اپیل کر سکتا ہے۔

ڈاکٹر ظفرالاسلام کا ورلڈفورم استنبول میں خطاب

نئی دہلی: استنبول میں اگلے ۳ – ۴/اکتوبر کومنعقد ہونے والے ورلڈ فورم میں ڈاکٹر ظفرالاسلام خان کو ذاتی حیثیت سے مدعوکیاگیاہے۔ ڈاکٹر ظفرالاسلام فورم میں ہندوستانی مسلم اقلیت کے بارے میں خطاب کریں گے۔ استنبول کے ورلڈ فورم میں دنیا بھر سے سیاستداں، دانشور، مصنفین، رسرچ اسکالر اور صحافی جمع ہو رہے ہیں اور دنیا کے مختلف مسائل کے بارے میں گفتگو کریں گے۔

You May Also Like

Notify me when new comments are added.