بریکنگ نیوز

مذہب

فکر وخیالات

مدیر کی قلم سے

Poll

Should the visiting hours be shifted from the existing 10:00 am - 11:00 am to 3:00 pm - 4:00 pm on all working days?

SUBSCRIBE LATEST NEWS VIA EMAIL

Enter your email address to subscribe and receive notifications of latest News by email.

اردو ڈراما فیسٹول کے پانچویں دن بھی فنکاروں کا جلوہ

زاہدہ زیدی کی اس گراں قدر تحریر کو فہد خان کی ہدایت میں انترال تھیٹر گروپ کے فنکاروں نے اسٹیج پر زندگی دی۔ پرو فیسر شہپر رسول نے فنکاروں کی محنتوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی تخلیق اس وقت پر اثر ثابت نہیں ہوتی جب تک اس کے کرداروں میں حقیت کا رنگ نہ بھر دیا جائے۔

Administrators

 

نئی دہلی،29اکتوبر:دور حاضر کی عاجلانہ طرز زندگی نے انسان کو مشین بنادیا ہے جہاں رشتوں کی کوئی اہمیت نہیں رہ گئی ہے۔ خصوصاً ازدواجی زندگی کو اس نے اس قدر متاثر کیا ہے کہ دو جسم ایک جان سمجھا جانے والا یہ رشتہ بھی اجنبیت کی خوفناک تصویر بن کر رہ گیا ۔اردو اکادمی دہلی کے زیر اہتمام سری رام سینٹر منڈی ہاؤس میں جاری چھ روزہ اردو ڈراما فیسٹول کے پانچویں دن میں شوہر بیوی کی آسودہ حال زندگی پر مبنی ڈراما ’’دوسرا کمرہ ‘‘پیش کیا گیا جس کو ناظرین نے بے حد پسند کیا ۔ 
ڈرامے میں بے میل شادی شدہ زندگی کی اس تلخ حقیقت سے پردہ ہٹانے کی کوشش کی گئی ہے جو آج بیشتر گھروں کی کہانی بن چکی ہے۔ میاں بیوی ایک گھر میں ایک ہی چھت کے نیچے ضرور رہتے ہیں مگر ایک دوسرے کے لئے زندہ لاش کی مانند جہاں بچوں کی کلکاریاں گونجنی چاہئیں وہا ں روز بروز ڈر اور خوف کے سائے دراز ہوتے چلے جاتے ہیں، ان کی ذہنی کیفیت ان پاگلوں کے مشابہ ہوجاتی ہے جو جاگتی آنکھوں بھیانک خواب دیکھنے لگتے ہیں۔ جنھیں گھر کے اس دوسرے کمرے میں جس پر بیوی صرف اپنا حق جتا کرشوہرکے داخلہ پر پابندی عائد کرتی ہے، برہنہ لاشیں نظر آنے لگتی ہیں ۔آخر ایسا کیوں کر ہوتا ہے ان سب وجوہات کی بنیاد کیا ہے ؟ انہیں سوالوں کے جواب دیتے اس ڈرامے کو ناظرین نے خوب سراہا۔
زاہدہ زیدی کی اس گراں قدر تحریر کو فہد خان کی ہدایت میں انترال تھیٹر گروپ کے فنکاروں نے اسٹیج پر زندگی دی۔ 
پرو فیسر شہپر رسول نے فنکاروں کی محنتوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی تخلیق اس وقت پر اثر ثابت نہیں ہوتی جب تک اس کے کرداروں میں حقیت کا رنگ نہ بھر دیا جائے۔ آج کے فنکاروں نے جس خوبصورتی سے اپنے اپنے کرداروں کو نبھا یا ہے اگر یہ کہا جائے تو بے جا نہ ہوگا کہ انہوں نے مصنف کے نقل کردہ کرداروں کو اسٹیج پر زندہ کردیا ہے یہی تھیٹر آرٹ کا کمال ہے ۔
اسٹیج پر سونیا کے روپ میں دھارنا چوہان نے بیوی کاکردار ادا کیا ہے اور سورج کے روپ میں شوہر کا کردار آشش شرما نے ادا کیا ہے ۔ان کے علاوہ پرینکا شرما ،تاشو جیسوال ،ابھیجیت سنگھ بھی سپورٹنگ کرداروں میں نظر آئے ۔احد خان نے موسیقار کے طور پر اپنی خدمات انجام دیں ۔

 

You May Also Like

Notify me when new comments are added.