حج ۲۰۲۰ میں تعداد محدود کرنے کا سعودی حکومت کا فیصلہ

حالات اور وقت کے مطابق مناسب فیصلہ ہے۔ مولانا فیصل مدنی

وطن سماچار ڈیسک

حج ۲۰۲۰ میں تعداد محدود کرنے کا سعودی حکومت کا فیصلہ

حالات اور وقت کے مطابق مناسب فیصلہ ہے۔ مولانا فیصل مدنی 

 

سعودی حکومت نے اس سال حجاج کی تعداد محدود کرتے ہوئے یہ فیصلہ لیا ہےکہ امسال صرف اندرون سعودی عرب رہنے والوں کے لئے حج کی ادائیگی کی اجازت دی جائے جبکہ دیگر ممالک کے حجاج اس سال حج نہیں کرسکیں گے ، کورونا بیماری سے بچاؤ اور حجاج و زائرین کےحفاظت و سلامتی کی خاطر لیا گیا یہ فیصلہ مناسب ہے، اس طرح کے خیالات کا ا ظہار جامعہ اسلامیہ، کوسہ ممبرا کےنائب ناظم اور ریکٹر مولانا فیصل عبدالحکیم مدنی نے کیا ہے۔ ساتھ ہی انھوں نے یہ بھی کہا کہ عالمی ادارہ صحت کی گائڈ لائن کے مطابق کسی بھی طرح کا عوامی اجتماع وباء کے مزید پھیلنے کا سبب بن سکتا ہے اور حج کے تمام مقامات پر دنیا بھر کے مختلف ممالک کے لاکھوں لوگ اکٹھا ہوتے ہیں۔ جہاں سوشل ڈِسٹنسِنگ برتنا ودیگر احتیاطی اقدامات اختیار کرنا ممکن نہیں ہوسکے گا نیز جب حجاج کرام واپس اپنے ملکوں میں جائیں تو یہ خدشہ ہوگا کہ دیگر ممالک میں بھی یہ وباء منتشر نہ ہو لہٰذا سعودی حکومت کا یہ فیصلہ عقلی وشرعی اعتبار سے نہایت مناسب فیصلہ ہے کہ نہ تو حج کو مکمل طور پر بند کیا گیا اور نہ ہی بڑی تعداد کو اجازت دے کر انسانی جانوں کو خطرہ میں ڈالا گیا ، واضح ہو کہ انسانی جانوں کی حفاظت ہماری شریعت اسلامیہ کے بنیادی اصولوں میں سے ہے اور تمام طرح کی احتیاطی تدابیر اختیار کرنا مسلمان کی ذمہ داری ہے ۔اللہ سے دعا ہے کہ حرمین شریفین کو ہر طرح کی وباء و فتنوں سے محفوظ رکھے ۔ آمین

You May Also Like

Notify me when new comments are added.