وزیر اعظم مودی کی حکومت کسانوں کو بہ اختیار بنا نے کیلئے ہمہ وقت پُر عزم :- محمد عرفان احمد

بی جے پی کے سینئر رہنما اور قومی نائب صدر اقلیتی مورچہ محمد عرفان احمدگرام حیدر نگر، موجہ مدکولہ میں "’کسان کھاٹ پنچایت"‘ کے دوران کسانوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس نے برسوں تک کسانوں کو ووٹ بینک کی طرح استعمال اور جھوٹا لالچ دیکر گمراہ کرتا ہے،مگر آج اسکی حقیقت سب کے سامنے عیاں ہے۔ محمد عرفان احمد نے اپنی تقریر میں کہا کہ زرعی اصلاحات بل ’بچولیوں کے چکرویہ‘ کو چکنا چور کر نے اور ’کسانوں کی محنت‘ کی پوری قیمت ادا کرنے کی ضمانت ہے، کانگریس اور اسکے اتحادی کسانوں کے بل کے بارے میں خدشہ پیدا کرکے کسانوں کو گمراہ کررہے ہیں،البتہ جب مودی حکومت کسانوں کو بااختیار بنانے کیلئے اقدامات کررہی ہے،مگر کانگریس کسانوں کو گمراہ کرنے کی سازش کررہی ہے۔مسٹرعرفان احمد نے مزید کہا کہ کسانوں کی پیداوار تجارت اور

وطن سماچار ڈیسک

زیور کے گرام حیدر نگر مدکولا میں "’کسان کھاٹ چوپال"‘ کا انعقاد
وزیر اعظم مودی کی حکومت کسانوں کو بہ اختیار بنا نے کیلئے ہمہ وقت پُر عزم :- محمد عرفان احمد  
نئی دہلی، 7,اکتوبر- بی جے پی کے سینئر رہنما اور قومی نائب صدر اقلیتی مورچہ محمد عرفان احمدگرام حیدر نگر، موجہ مدکولہ میں "’کسان کھاٹ پنچایت"‘ کے دوران کسانوں سے خطاب کرتے ہوئے  کہا کہ کانگریس نے برسوں تک کسانوں کو ووٹ بینک کی طرح استعمال اور جھوٹا لالچ دیکر گمراہ کرتا ہے،مگر آج اسکی حقیقت سب کے سامنے عیاں ہے۔ محمد عرفان احمد نے اپنی تقریر میں کہا کہ زرعی اصلاحات بل ’بچولیوں کے چکرویہ‘ کو چکنا چور کر نے اور ’کسانوں کی محنت‘ کی پوری قیمت ادا کرنے کی ضمانت ہے، کانگریس اور اسکے اتحادی کسانوں کے بل کے بارے میں خدشہ پیدا کرکے کسانوں کو گمراہ کررہے ہیں،البتہ جب مودی حکومت کسانوں کو بااختیار بنانے کیلئے اقدامات کررہی ہے،مگر کانگریس کسانوں کو گمراہ کرنے کی سازش کررہی ہے۔مسٹرعرفان احمد نے مزید کہا کہ کسانوں کی پیداوار تجارت اور تجارت (تشہیر اور آسانیاں) بل کی منظوری کے ساتھ ہی، زرعی خدمات اور ضروری سامان (ترمیمی) بل پر کسانوں (امپاورمنٹ اینڈ پروٹیکشن) پرائس انشورنس اینڈ ایگریمنٹ بل کے ساتھ، کاشتکاروں کو اپنی فصلوں کو ذخیرہ کرنے کی ضرورت ہے اور انہیں بیچنے والوں کے چنگل سے فروخت اور آزادی حاصل ہوگی۔ کسان براہ راست خریدار کے ساتھ رابطہ قائم کرسکیں گے نیز کسانوں کو انکی پیداوار کی پوری قیمت مل سکے گی،ساتھ ہی کسانوں کو جدید ترین زرعی ٹکنالوجی، زرعی سامان اور بہتر کھاد بیج تک رسائی حاصل ہوگی، کسانوں کو 3 دن میں ادائیگی کی گارنٹی مل جائیگی۔ کسان نہ صرف اپنی فصل سے نمٹ سکتے ہیں بلکہ دوسری ریاستوں کے لائسنس یافتہ تاجروں کے ساتھ بھی، اسکا مقابلہ مارکیٹ میں ہوگا اور کسانوں کو ان کی محنت کیلئے اچھی قیمتیں ملیں گی۔ ’ون نیشن ون مارکیٹ‘ کے تصور کو فروغ دیا جائیگا تاکہ وہ ملک بھر کے کسانوں کو پیداوار فروخت کریں۔ مسٹر عرفان نے یہ بھی کہا کہ وزیر اعظم نریندر بھائی مودی گاؤں، غریبوں، ملک کے کسانوں اور مسٹر مودی کی حکومت میں مفادات کیلئے وقف ہیں، کسانوں کے کسی بھی حقوق کو کمزور نہیں کیا جائیگا، مودی سرکار میں اب تک "’وزیر اعظم کسان سمن ندھی‘" کے تحت، کسانوں کو 92 ہزار کروڑ روپے سے زیادہ دیئے جاچکے ہیں۔ اُنکا دوران گفتگو یہ بھی کہنا تھا کہ مودی حکومت کسانوں کوبا اختیار بنانے کیلئے پرعزم ہے۔ یو پی اے کے وقت، زرعی بجٹ 12 ہزار کروڑ تھا، جسے مودی حکومت نے بڑھا کر ایک لاکھ 34 ہزار کروڑ کردیا تھا۔ 22 کروڑ سے زائد کسانوں کو "مٹی ہیلتھ کارڈز" دیئے گئے ہیں، وزیر اعظم فصل انشورنس کا فائدہ 8 کروڑ کسانوں کو دیا گیا ہے، مودی سرکار 10ہزار نئے کسان پروڈیوسر تنظیموں پر 6ہزار 850 کروڑ روپئے خرچ کررہی ہے، زرعی شعبے کیلئے خود کفیل پیکیج کے تحت 1 لاکھ کروڑ کا اعلان کیا گیا تھا، کسانوں کے قرض کیلئے پہلے 8 لاکھ کروڑ کی جگہ 15 لاکھ کروڑ روپئے کا انتظام کیا گیا ہے۔ اس پروگرام کے منتظمین میں فیروز خان گرام پردھان، مہمان خصوصی زیور منڈل بی جے پی کے انچارج سرفراز علی، احسان خان، زاہد علی گاؤں سرسول، راجیش کمار، حاجی جان محمد، دلشاد خان، انصاف خان، شاہد خان گرام اگورہ، سابق پردھان دھرمویر سمیت مختلف گاؤں کے کسانوں نے اپنے ٹریکٹرز کے ساتھ "کسان کھاٹ پنچایت" میں حصہ لیا اور کسان بل کی حمایت کی۔!!

You May Also Like

Notify me when new comments are added.