بریکنگ نیوز

مذہب

فکر وخیالات

مدیر کی قلم سے

Poll

Should the visiting hours be shifted from the existing 10:00 am - 11:00 am to 3:00 pm - 4:00 pm on all working days?

SUBSCRIBE LATEST NEWS VIA EMAIL

Enter your email address to subscribe and receive notifications of latest News by email.

معاشی بدحالی دور کرنے میں جماعت اسلامی ہند ہوگی سرگرم: امیر جماعت سید سعادت اللہ حسینی

کوئڈ 19 اور حکومت کی غلط پالیسیوں کے نتیجے میں ملک کے عام باشندے شدید معاشی بحران کا شکار ہیں۔ ملک کو اس معاشی کیفیت سے نکالنے کے لئے جماعت اسلامی ہند ہر سطح پر نہات سرگرمی کے ساتھ کام کرے گی۔اس سلسلے میں قومی سطح پر معیشت کے میدان میں اصلاحات اور متبادل معاشی نظام پیش کرنے کے لئے نیشنل کانفرنس یا سمینار منعقد کیا جائے گا جو حکومت وقت کو تجاویز و مشورے پیش کرے گا۔ جبکہ مقامی سطح پر جماعت اپنی اکائیوں اور دیگر تنظیموں کی مدد سے باشندگان ملک کے معاشی مسائل کو حل کرنے کے لئے کوشاں رہے گی۔یہ باتیں امیر جماعت اسلامی ہند سید سعادت اللہ حسینی نے امرائے حلقہ (ریاستوں کے امراء) اور ریاستوں کی مجلس شوریٰ کے ارکان کو اپنے خطاب میں کہی۔

وطن سماچار ڈیسک
فائل فوٹو

معاشی بدحالی دور کرنے میں جماعت اسلامی ہند ہوگی سرگرم: امیر جماعت سید سعادت اللہ حسینی

 

نئی دہلی: کوئڈ 19 اور حکومت کی غلط پالیسیوں کے نتیجے میں ملک کے عام باشندے شدید معاشی بحران کا شکار ہیں۔ ملک کو اس معاشی کیفیت سے نکالنے کے لئے جماعت اسلامی ہند ہر سطح پر نہات سرگرمی کے ساتھ کام کرے گی۔اس سلسلے میں قومی سطح پر معیشت کے میدان میں اصلاحات اور متبادل معاشی نظام پیش کرنے کے لئے نیشنل کانفرنس یا سمینار منعقد کیا جائے گا جو حکومت وقت کو تجاویز و مشورے   پیش کرے گا۔ جبکہ مقامی سطح پر جماعت اپنی اکائیوں اور دیگر تنظیموں کی مدد سے باشندگان ملک کے معاشی مسائل کو حل کرنے کے لئے کوشاں رہے گی۔یہ باتیں امیر جماعت اسلامی ہند سید سعادت اللہ حسینی نے امرائے   حلقہ (ریاستوں کے امراء) اور ریاستوں کی مجلس شوریٰ کے ارکان کو اپنے خطاب میں کہی۔

 

انہوں نے مزید کہاکہ اس سلسلے میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو پروگرام وضع کرے گی۔ انہوں نے اس ضمن میں ’رفا چیمبر آف کامرس‘کی خدمات کو سراہا۔ انہوں نے کوئڈ کے دوران جماعت اسلامی ہند سے وابستہ مردو خواتین کی جانب سے ریلیف کے میدان میں انجام دی گئی خدمات کو تحسین کی نظر سے دیکھتے ہوئے کہا کہ انسانوں کے لئے ہمارییہ  بے لوث خدمت کا کام مسلسل جاری رہنا چاہئے۔انہوں نے مزید کہا کہ لاک ڈاؤن کے دوران  جماعت اسلامی ہند سے وابستہ ڈاکٹرس عوام کی امیدوں کا مرکز بنے رہے۔ ان کی ہمت وحوصلے کے ساتھ کی گئی طبی خدمات کو سماج سدا یاد رکھے گا۔

 

 

جماعت اسلامی ہند نے اس عالمی وبا کے دوران خدمت خلق کے میدان میں نمایاں خدمات انجام دینے کے علاوہ انسانوں کو ان کے حقیقی رب سے متعارف کرانے کا کام بھی کیا۔جناب سعادت اللہ حسینی نے کرناٹک، تمل ناڈو، مہاراشٹر اور تلنگانہ ریاستوں کی جماعتوں کی جانب سے چلائی گئی  مہمات  کا ذکر کیا اور کہا کہ ریاست تلنگانہ کی جماعت نے ”سدبھاؤنا“ مہم کے ذریعہیہ ثابتکردیا  کہ لوگ آج بھی سماج کو ایک دوسرے سے جوڑنے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔ انہوں نے بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ”ملت اسلامیہ ہند ایک نوجوان ملت ہے۔ہندوستان میں آباد مسلمانوں کی اوسط عمر 22 تا 25 سال ہے۔ یہ عمر رحمت بھی ہے اور زحمت بھی۔ ہمیں اپنے نوجوانوں کی صحیح رہنمائی کرنی ہے۔

 

 ان کی صلاحیتوں  کو ملک و ملت کی تعمیر کے لئے تیار کرنا ہے۔ تعلیم کے میدان میں ہمارے نوجوان پچھلے سالوں کی بہ نسبت آگے بڑھے ہیں لیکن اس میں مزید بہتری کی ضرورت ہے“۔ امیر جماعت نے مزید کہا کہ ”ملک کی ملت اسلامیہ کی مختلف جماعتوں اور تنظیموں میں باہمی ربط و تعاون اور علمی کاز کے لئے ایک آواز بننے کا ماحول پیدا ہوا ہے۔ یہ ایک مثبت علامت ہے“۔خطاب کے دوران انہوں نے یہ بھی  کہا کہ”ملک و ملت سے متعلق مختلف مسائل پر جماعت کے موقف کو دیگر جماعتیں و ادارے قبول کرتے ہیں۔انہوں نے  خواتین کی تحریک اسلامی میں شمولیت کا ذکرخصوصی طور پر کرتے  ہوئے کہا کہ جماعت کی سرگرمیوں میں خواتین کی شمولیت  میں اضافہ ہوا ہے  اور  وہ اب ذمہ داریاں بھی نبھا نے لگی ہیں۔ کوئڈ کے دوران خواتین نے بڑے صبرو ضبط کے ساتھ اپنے کردار نبھائے“۔امیر جماعت اسلامی ہند نے جماعت سے وابستہ افراد کو مخاطب کرتے ہوئے  کہا کہ ”ہمارا بنیادی کام بندگان خدا کو خدا کی بندگی کی دعوت دیناہے اور ہمیں انفرادی اور اجتماعی سطح پر اسلام کا نمونہ پیش کرنا ہے۔اسی میں ہمارے دونوں جہانوں کی کامیابی مضمر ہے۔

You May Also Like

Notify me when new comments are added.