بریکنگ نیوز

مذہب

فکر وخیالات

مدیر کی قلم سے

Poll

Should the visiting hours be shifted from the existing 10:00 am - 11:00 am to 3:00 pm - 4:00 pm on all working days?

SUBSCRIBE LATEST NEWS VIA EMAIL

Enter your email address to subscribe and receive notifications of latest News by email.

راجستھان میں مدرسہ بورڈ کو ملا اسٹیچوری درجہ

ڈاکٹر اعظم بیگ نے وزیراعلیٰ اور صالح محمد کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ اب بچوں کا مستقبل روشن ہوگا

وطن سماچار ڈیسک

راجستھان میں مدرسہ بورڈ کو ملا اسٹیچوری درجہ

ڈاکٹر اعظم بیگ نے وزیراعلیٰ اور صالح محمد کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ اب بچوں کا مستقبل روشن ہوگا

نئی دہلی : اشوک گہلوت کی قیادت والی راجستھان سرکار نے مدرسہ بورڈ کو قانونی حیثیت دینے والے زیر التوا بل کو اسمبلی سے پاس کردیا ہے ۔ جس سے اب مدرسہ بورڈ کو قانونی اور اسٹیچوری حیثیت مل جائے گی ۔ اس بات کی جانکار آل انڈیا کانگریس کمیٹی اقلیتی شعبہ کے نیشنل کوآرڈینیٹر اور مدرسہ بورڈ کے سابق سکریٹری ڈاکٹر اعظم بیگ نے دیتے ہوئے کہاکہ ہم وزیراعلیٰ اشوک گہلوت کے شکر گذار ہیں کہ انہوںنے اس تاریخی فیصلہ کو انجام دیا اور مدرسہ والوں کی اس مانگ کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے مدرسہ بورڈ کو ایک اسٹیچوری حیثیت دینے والا بل اسمبلی سے پاس کرایا۔

 اعظم بیگ نے میڈیاسے بات چیت میں کہامدرسہ بورڈ کو قانونی حیثیت دینے کی سالوں سے آرہی مانگ پر جس طرح سے وزیراعلیٰ اشوک گہلوت او ر اقلیتی امور کے وزیر صالح محمد کی کوششوں سے مہر لگی ہے اس کیلئے ہم پوری راجستھان سرکار کے مشکور ہیں کہ انہوںنے صوتی ووٹوں سے اسمبلی میں مدرسہ بورڈ ایکٹ 2020کو پاس کرایا۔ 2003میں راجستھان میں ریاستی سرکا ر کے ذریعہ تشکیل شدہ مدرسہ بورڈ کے پہلے سکریٹری رہے ڈاکٹر اعظم بیگ نے کہاکہ ہمیں امید ہے کہ اب آنے والے دنوں میں اقلیتوں کی تعلیمی اور سماجی صورتحال میں بہتری آئے گی ۔ انہوں نے امید ظاہر کی ہے کہ ریاست کے پانچ ہزار مدارس میں زیر تعلیم دو لاکھ سے زیادہ بچے اب زیادہ بہتر ڈھنگ سے اپنی تعلیمی ضروریات کو پورا کر سکیں گے اور امید ہے کہ اب ہمارے یہ بچے مذہبی تعلیم کیساتھ ساتھ دنیوی علوم کے زیور سے آراستہ ہو کر دنیا میں بھارت کی شان بڑھائیں گے۔

 

You May Also Like

Notify me when new comments are added.