وہ کام جس کی ضرورت آزادی کے بعد ہی تھی لیکن اب امپار نے کردیا

پرانی دہلی کی متعدد مساجد، مندراور چرچ میں امپار نے چلائی صفائی مہم، لوگوں نے اس نیک کام سے جڑنے کا کیا عہد

وطن سماچار ڈیسک

MASJID_IMPAR.jpgامپار کی صفائی مہم نے جیتا لوگوں کا دل

پرانی دہلی کی متعدد مساجد، مندراور چرچ میں امپار نے چلائی صفائی مہم، لوگوں نے اس نیک کام سے جڑنے کا کیا عہد

نئی دہلی،29جون: امپار نے اپنے شعبہ عمل کو اور وسیع کرتے ہوئے صفائی مہم بھی چلانے کا فیصلہ کیا ہے اور اس کی باقاعدہ شروعات بھی پرانی دہلی سے ہوچکی ہے۔امپار کی جانب سے جاری پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ ہمیں آپ کو یہ بتاتے ہوئے دکھ اور افسوس ہورہا ہے کہ مساجد اور مندروں جیسے مقدس مذہبی مقامات میں بھی کوڑا دیکھنے کو ملتا ہے، لیکن اس سے زیادہ دکھ کی بات یہ ہے کہ ہم ان جگہوں کو صاف کرنے کے بجائے اپنی آنکھیں بند کرلیتے ہیں اور ہم یہ سمجھتے ہیں کہ یہ ہماری نہیں کسی اور کی ذمہ داری ہے، جوکہ ہماری تنگ ذہنیت کی عکاسی کرتا ہے۔ امپار کی پروگرام کوآرڈینیٹر انجلا خان نے میڈیا کو جاری ایک پریس ریلیز میں بتایاکہ جب ہم خود مسجد اور مندر جیسے مقدس مقامات پر جاتے ہیں اور ان سے ہمیں عقیدت بھی ہے تو ہمارے اوپر ان کی صفائی کی بھی ہماری ذمہ داری عائد ہوتی ہے اور یہ تبھی ممکن ہے جب ہم سب عوامی طور پر اس کی ذمہ داری لیں اور پختہ عزم کریں کہ نہ گندگی پھیلائیں گے اور نہ ہی لوگوں کو گندگی پھیلانے دیں گے اور اگر کوئی ایسا کرتا ہے تو انسانی اصولوں کو مدنظر رکھتے ہوئے ہم اس کی اصلاح کرنے کی کوشش کریں گے۔

 

MANDIR_IMPAR.jpg

انڈین مسلمس فار پروگریس اینڈ ریفارمس کی طرف سے جاری ایک پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ اس صفائی اور بیداری مہم کو فروغ دینے کیلئے لوگوں کی زندگیوں سے اسے جوڑنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، جس کے لئے امپار ایک دیرینہ حکمت عملی بھی تیار کر رہا ہے۔ واضح رہے کہ پرانی دہلی میں صفائی مہم اور بیداری پروگرام کا انعقاد عمل میں آیا، جس کے تحت امپار کی رضاکار ٹیم نے مینا بازار، جامع مسجد، حج منزل، جین مندر، گوری شنکر مندر، شیش گنج گرودوارہ اور سنٹرل بپٹسٹ چرچ کے آس پاس کے علاقے کا احاطہ کیااور اس کی صفائی کی۔ بیداری ٹیم نے کوویڈ 19 بحران کے مدنظر صفائی ستھرائی اور اس کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی تاکہ لوگوں کو آگہی ہو سکے۔ اہم بات یہ ہے کہ صحت اور حفظان صحت کے طریقوں کے تئیں لوگوں کے طرز عمل میں تبدیلی لانے اور اس طرح کے کاموں میں عوامی شرکت کے مقصد پر زور دیا گیا۔ صفائی مہم کے دوران فیس ماسک،دستانے کوویڈ19 ہینڈ بل بھی تقسیم کیے گئے۔اس موقع پر لوگوں کا رد عمل غیر معمولی تھا۔ انہوں نے امپار اور اس کے ذریعہ کئے جارہے کام کے بارے میں بھی دریافت کیا اور کچھ لوگوں نے  یقین دلایا کہ وہ امپار کی آئندہ صفائی مہم میں بھی حصہ لیں گے۔ رضاکار ٹیم میں شان فیلڈ منیجر امپار، ڈاکٹر عادل، ڈاکٹر آرزو، مسٹر اختر، مسٹر شاہد، مسٹر سہراب، مسٹر ایوب، مسٹر چودھری اکرم، مسٹر فہیم، مسٹر نور الٰہی اور مسٹر شہزاد سمیت متعدد افراد شامل تھے۔ امپائر کی پروگرام کوآرڈینیٹر انجلا خان نے بتایاکہ تنظیم آنے والے دنوں میں دہلی کے دوسرے حصوں میں بھی ایسی مہم چلانے اور عوام کو اس سے وابستہ کرنے کیلئے پرعزم ہے۔

You May Also Like

Notify me when new comments are added.