بریکنگ نیوز

مذہب

فکر وخیالات

مدیر کی قلم سے

Poll

Should the visiting hours be shifted from the existing 10:00 am - 11:00 am to 3:00 pm - 4:00 pm on all working days?

SUBSCRIBE LATEST NEWS VIA EMAIL

Enter your email address to subscribe and receive notifications of latest News by email.

فساد متاثرین کی ہر ممکن مدد جاری، آٹو خرید کر متاثر کے حوالے کیا گیا

مسجد اللہ والی شہید بھگت سنگھ کالونی کراول نگر کا کام بھی آخری مرحلے میں ہے اور بہت جلد جنتی مسجد گوکل پوری کی مرمت کا کام بھی ان شاء اللہ شروع کردیا جائے گا۔ بھجن پورہ میں جلائے گئے ای رکشہ کے شوروم کے مالک رئیس احمد کومالی مدددی گئی ہے تاکہ وہ اپنے کام کو پھر سے شروع کرسکیں۔ قابل ذکر ہے کہ فساد متاثرین کی قانونی چارہ جوئی کے لئے جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے آن ریکارڈ ایڈووکیٹ ظہیرالدین بابرچوہان کی سربراہی میں دس وکیلوں کا ایک پینل مقررکردیا گیا ہے جو مستقل فسادمتاثرین کے مقدمات کی پیروی کررہا ہے۔

وطن سماچار ڈیسک

فساد متاثرین کی ہر ممکن مدد جاری، آٹو خرید کر متاثر کے حوالے کیا گیا

نئی دہلی14/ستمبر2020شمال مشرقی دہلی میں تقریباً سات ماہ قبل ہونے والے فسادات کے متاثرین کے درمیان امدادی کاموں کاسلسلہ بدستور جای ہے۔صدرِجمعیۃ علماء ہند مولانا سید ارشد مدنی کی ہدایت پر متاثرین کے درمیان مدد فراہمی کے اس سلسلے کی تازہ کڑی کے تحت کراول نگر میں کرایہ پر رہنے والے مقصود کو آج جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے آٹو خرید کر دیا گیا۔خیال رہے کہ مقصودکے آٹو کو شرپسندوں نے جلاکر خاکستر کردیاتھا،آٹوپاکر مقصودبہت خوش تھا اور نئے سرے سے اپنی زندگی کا آغازکرنے پر مطمئن بھی۔ مقصودکو آٹو کی چابی مولانا محمد مسلم قاسمی صدر جمعیۃ علماء دہلی نے اپنے دست مبارک سے دی اس موقع پر مفتی عبدالرازق مظاہری جنرل سکریٹری جمعیۃ علماء دہلی، قاری محمد ساجد فیضی سکریٹری جمعیۃ علماء دہلی، الحاج سلیم رحمانی صدر جمعیۃ علماء شمال مشرقی دہلی مولانا جمیل اختر قاسمی سکریٹری جمعیۃ علماء شمال مشرقی دہلی،مہتاب عالم ودیگر معززین علاقہ موجود تھے۔واضح ہوکہ جمعیۃ علماء ہند کی ایک ٹیم مستقل فساد متاثرین کے درمیان راحت ورسانی کے عمل میں سرگرم عمل ہے۔شمال مشرقی دہلی فساد متاثرہ علاقے کراول نگر،کھجوری خاص،گڑھی میہڈو،میں اب بھی مکانات کی تعمیر ومرمت کا کام جاری ہے جن میں سے اکثر مکانات کا کام مکمل ہوگیا ہے اور وہ متاثرین کے حوالے کردئے گئے ہیں اور باقی بھی انشاء اللہ بہت جلد متاثرین کے حوالے کردئے جائیں گے۔  فساد زدہ علاقوں میں شرپسندوں کے ذریعہ مساجد کو بھی بہت نقصان پہنچایاگیا تھا جس کی تعمیر ومرمت کا کام بھی ہنوزجاری ہیں، خاکستر کی گئی فاطمہ مسجد کھجوری خاص کا کام مکمل ہوگیا ہے جس میں باضابطہ نماز اداکی جارہی ہے۔

 

 

 

مسجد اللہ والی شہید بھگت سنگھ کالونی کراول نگر کا کام بھی آخری مرحلے میں ہے اور بہت جلد جنتی مسجد گوکل پوری کی مرمت کا کام بھی ان شاء اللہ شروع کردیا جائے گا۔ بھجن پورہ میں جلائے گئے ای رکشہ کے شوروم کے مالک رئیس احمد کومالی مدددی گئی ہے تاکہ وہ اپنے کام کو پھر سے شروع کرسکیں۔ قابل ذکر ہے کہ فساد متاثرین کی قانونی چارہ جوئی کے لئے جمعیۃ علماء ہند کی جانب سے آن ریکارڈ ایڈووکیٹ ظہیرالدین بابرچوہان کی سربراہی میں دس وکیلوں کا ایک پینل مقررکردیا گیا ہے جو مستقل فسادمتاثرین کے مقدمات کی پیروی کررہا ہے۔

You May Also Like

Notify me when new comments are added.